عمران خان کی قوم کو سپریم کورٹ کا تحفظ کرنے کیلئے تیاری کی کال

7

قوم کو سپریم کورٹ کا تحفظ کرنے کیلئے تیاری کی کال، جے آئی ٹی رپورٹ کو نہ ماننے کا اعلان کرنے والے لیگی وزراء احمق قرار، قطری شہزادے کو لانا شریف خاندان کی ذمے داری تھی، عمران خان برس پڑے، وزیر اعظم کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کا مطالبہ بھی کر دیا۔

اسلام آباد: (فلک نیوز) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے بنی گالہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پانامہ کیس کے معاملے پر شریف خاندان اور مسلم لیگ نون کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔ ان کا کہنا تھا کہ نون لیگ کے لوگ پھر سپریم کورٹ پر حملہ کریں گے، نون لیگ کے چار وزراء کو ایسی باتیں کرنے پر شرم آنی چاہئے، جے آئی ٹی نے رپورٹ سپریم کورٹ کو دینی ہے، جے آئی ٹی ہمارے لئے نہیں سپریم کورٹ کی تسلی کیلئے بنائی گئی ہے پھر ن لیگ نے کیسے کہہ دیا کہ رپورٹ کو نہیں مانیں گے؟ فیصلہ سپریم کورٹ نے کرنا ہے۔ عمران خان نے مزید کہا کہ قطری شہزادہ تلور کے شکار کیلئے پاکستان آ سکتا ہے تو گواہی دینے کیلئے کیوں نہیں آ سکتا؟ جے آئی ٹی کی مدت ختم ہونے سے ایک دن قبل کیسے کہہ دیا جاتا ہے کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ نہیں مانیں گے؟ عمران خان نے کہا کہ اس کا مطلب یہ ہے کہ ن لیگ والے سپریم کورٹ کا فیصلہ نہیں مانیں گے، قطری شہزادہ گواہ ہے تو اسے لانے کی ذمہ داری بھی شریف خاندان کی تھی، ججز نے ن لیگ کو قطری شہزادے کو لانے کا موقع دیا تھا۔ عمران خان نے مزید کہا کہ وفاقی وزراء نے کل جے آئی ٹی پر حملہ کیا، نواز شریف نے چار بڑے جرم کئے، انہیں جیل جانا چاہئے، شریف خاندان کے لوگ جے آئی ٹی سے باہر نکلتے ہیں تو منہ ایسے ہوتے ہیں جیسے مکے پڑے ہوں، ان کو پتا چل گیا ہے کہ میچ جیتنے کا کوئی چانس نہیں، یہ پاکستانی قوم کو بیوقوف سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب جے آئی ٹی کو جمہوریت کیخلاف سازش قرار دیا جا رہا ہے، یہ 30 سال سے لوگوں کو بیوقوف بنا رہے ہیں، عمران خان کی شریف خاندان اور نون لیگ پر شدید تنقید، کہتے ہیں سپریم کورٹ نے نوٹس لیا تو ایف آئی اے نے کہا ٹمپرنگ پکڑی گئی، اب نون لیگ والے سپریم کورٹ اور پاکستانی فوج کے پیچھے پڑ گئے ہیں۔ چیئرمین پی ٹی آئی کا مزید کہنا تھا کہ جے آئی ٹی بننے پر چھوٹے میاں صاحب نے بڑے کو لڈو کھلایا تھا مگر اب کہہ رہے ہیں کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ نہیں مانیں گے، میں سمجھتا ہوں کہ یہ لوگ سپریم کورٹ پر حملے کی تیاریاں کر رہے ہیں، عوام تیار رہیں، یہ مستقبل کی جنگ ہونے جا رہی ہے، ایک خاندان نے کرپشن بچانے کیلئے ادارے تباہ کر دیئے، نواز شریف کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے، عمران خان کا سپریم کورٹ سے مطالبہ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ عوام تیار رہیں کل اندازہ ہو جائے گا کہ یہ کیا کریں گے، وزراء کی پریس کانفرنس نے واضح کر دیا کہ یہ کیس ہار گئے ہیں، سپریم کورٹ نواز شریف سے استعفیٰ لے، شریف خاندان سپریم کورٹ کا فیصلہ نہیں مانے گا، گاڈ فادر سے ملک کی جان چھڑانے کیلئے اپنی نااہلی بھی منظور ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرے اوپر ایک کیس اوور سیز پاکستانیوں سے پیسہ اکٹھے کرنے کا ہے، دوسرا کیس بیرون ملک سے پیسہ کمانے اور پاکستان واپس لانے کا ہے، ساری تفصیلات دے دیں، نااہل نہیں ہو سکتا۔ چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ مریم نواز کا پیش ہونا مجھے بھی اچھا نہیں لگا، ہم عورت کی عزت کرتے ہیں، مجھ پر اور جمائما خان پر یہودی لابی کے الزامات لگائے گئے، جمائما پر الزامات لگانے والے گھٹیا لوگ ہیں، مریم نواز لندن فلیٹس کی مالکن ہیں، اس لئے ان کی پیشی ہوئی، اگر پانامہ کیس سازش ہے تو آئی سی آئی جے سے جا کر پوچھیں، شہباز شریف آئی سی آئی جے کیخلاف عدالت کیوں نہیں جاتے؟ عمران خان نے مزید کہا کہ مجھے دہشتگرد بنا دیا گیا، مافیا اسی طرح خوفزدہ کرتا ہے لیکن ہم نے پختونخوا میں امیر مقام سمیت کسی ایک خلاف مقدمہ درج نہیں کیا۔