چودھری نثار کے علاوہ نواز کابینہ کے تمام وزراء کو برقرار رکھنے کا فیصلہ

14

کس کو کونسی وزارت دی جائے؟ لیگی قیادت نے فیصلے کر لئے، مشاورتی اجلاس میں شاہد خاقان عباسی، نواز شریف اور شہباز شریف شریک ہوئے۔ شہباز شریف وزیر اعلیٰ رہیں گے یا وزیر اعظم بنیں گے؟ اس حوالے سے ابھی فیصلہ نہیں ہو سکا۔

گلیات: (فلک نیوز) حمزہ شہباز کے گھر نون لیگ کے بڑے سر جوڑ کر بیٹھے اور کابینہ کی تشکیل سے متعلق اہم فیصلے کئے۔ 8:15 پی ایم: ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی کابینہ میں چند اہم تبدیلیاں بھی متوقع ہیں اور خواجہ آصف کو وزیر خارجہ بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ 7:17 پی ایم ذرائع کا کہنا ہے کہ شہباز شریف کو الیکشن لڑانے یا نہ لڑانے کا فیصلہ 3 دن میں ہو گا۔ چودھری نثار نے وزیر اعظم شاہد خاقان کے اسرار کے باوجود کابینہ کا حصہ بننے سے معذرت کر لی ہے۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف چھانگلہ گلی سے روانہ ہو گئے ہیں۔ 6:51 پی ایم: ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی کابینہ میں نئے وزیر داخلہ کے علاوہ تین چار مزید نئے وزراء کو بھی شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ 6:45 پی ایم: شہباز شریف کو وزیر اعلیٰ برقرار رکھنے یا مرکز میں لانے سے متعلق ابھی کوئی حتمی فیصلہ نہیں ہو سکا اور اس حوالے سے مشاورت ابھی جاری ہے۔ یہی وجہ ہے کہ تاحال نون لیگ نے این اے 120 کے ٹکٹ کا فیصلہ بھی نہیں کیا۔ 6:30 پی ایم: لیگی قیادت نے فیصلہ کیا ہے کہ بیشتر وزارتیں انہیں وزراء کے پاس رہیں گی جو نواز کابینہ میں انہیں چلا رہے تھے۔ تاہم، چودھری نثار نے باضابطہ طور پر وزیر اعظم شاہد خاقان کو بتا دیا ہے کہ وہ ان کی کابینہ میں کوئی وزارت نہیں لیں گے لیکن اگر شہباز شریف وزیر اعظم بنے تو وہ ان کی کابینہ میں شامل ہونے پر تیار ہیں۔ 5:10 پی ایم: کس کو کون سی وزارت دیں؟ نون لیگ کے بڑوں نے مری میں پانچ گھنٹے مشاورت کی۔ اجلاس میں داخلہ، خارجہ اور دفاع کی وزارتوں کیلئے مختلف ناموں پر غور کیا گیا۔ شہباز شریف کو وفاق میں ذمہ داری دینے یا نہ دینے پر بھی سوچ بچار کی گئی۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی طویل مشاورتی اجلاس میں شرکت کے بعد واپس روانہ ہو گئے ہیں جبکہ وزیر اعلیٰ پنجاب ابھی مری میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ساتھ ہی موجود ہیں۔ مشاورتی اجلاس میں سینیٹر پرویز رشید بھی شریک ہوئے۔ دوسری جانب، دانیال عزیز اور مریم اورنگزیب بھی ڈونگا گلی میں واقع حمزہ شہباز کے گھر پہنچ گئے ہیں۔