بے نظیر بھٹو قتل کیس کا فیصلہ 9 سال بعد محفوظ

178

انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پراسیکیوٹر ایف آئی اے اور ملزمان کے وکلاء نے اپنے حتمی دلائل مکمل کر لئے۔

راولپنڈی:  انسداد دہشتگردی عدالت نے بینظیر بھٹو قتل کیس کا فیصلہ 9 سال بعد محفوظ کر لیا۔ سماعت انسداد دہشتگردی عدالت کے جج محمد اصغر خان نے کی جس میں پراسیکیوٹر ایف آئی اے اور ملزمان کے وکلاء نے اپنے حتمی دلائل مکمل کئے۔ بینظیر قتل کیس میں 6 چالان عدالت میں پیش کئے گئے، سابق صدر پرویز مشرف کا مقدمہ داخل دفتر کر دیا گیا جس پر الگ ٹرائل چلے گا، بینظیر قتل کیس میں سابق سی پی او سعود عزیز، ایس پی خرم شہزاد کی قسمت کا فیصلہ ہوگا جبکہ گرفتار ملزمان شیرزمان، حسنین گل، اعتزاز شاہ، رفاقت حسین اور عبدالرشید کا بھی فیصلہ ہوگا۔