سائنسدانوں کا روپ دھارنے کا عالمی ریکارڈ

30

امریکا میں تقریباً 900 کے قریب افراد نے بہ یک وقت سائنسدانوں کا روپ دھار کر گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کا ایک اعزاز اپنے نام کر لیا ہے۔

سالٹ لیک سٹی کی ایک کمپنی یوسی اے این اے نے اپنی پچیسویں سالگرہ پر اس کا عملی مظاہرہ کیا۔ یہ ادارہ غذائی اور طبی مصنوعات تیار کرتا ہے جن میں مریضوں کے لیے مخصوص غذائیں بھی شامل ہیں۔ مظاہرے میں 893 افراد نے سفید لیب کوٹ، تجربہ گاہوں میں استعمال ہونے والی عینک اور ٹیسٹ ٹیوب کے ساتھ تصاویر بنوائیں اور سب نے سائنسدانوں کا وہ لبا پہنا جو وہ تجربہ گاہوں میں پہنا جاتا ہے۔-و ایس اے این اے کی سالگرہ اور بین الاقوامی کانفرنس کے موقع پر اس کے سائنسدانوں بلکہ انتظامی عملے نے بھی اسکالرز کا روپ دھار کر اس تاریخی تقریب میں حصہ لیا۔

اس موقع پر یوایس اے این اے میں رابطے اور مارکیٹنگ افسر ڈین مکوگا نے کہا کہ سینکڑوں لوگوں نے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے جو کمپنی کو خراجِ تحسین پیش کرنے کا ایک بہترین طریقہ بھی ہے۔ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے اسے ’سائنسدانوں کے لباس میں دنیا کا سب سے بڑا اجتماع قرار دیا ہے‘ اور اس کا سرٹفکیٹ بھی جاری کر دیا ہے۔

اس سے قبل ایک وقت میں سب سے زیادہ سائنسدانوں کا لباس پہننے کا ریکارڈ 489 افراد پر مشتمل تھا جسے امریکی کمپنی نے دوگنی تعداد سے توڑ دیا ہے۔