عقیدہ ختم نبوت اورناموس رسالت کا ہرقیمت پرتحفظ کریں گے۔عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت

16

18ستمبرکو تحفظ ناموس رسالت سیمینا رمثالی ہوگا،تمام مکاتب فکر کے ممتاز علماء کرام شرکت کریں گے
عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے رہنماؤں کامرکزختم نبوت لاہور میں اجلاس سے خطاب
لاہور (فلک نیوز )7ستمبر1974ء کو پاکستان کی پارلیمنٹ نے قادیانیوں کو ایک آئینی ترمیم کے ذریعے غیرمسلم اقلیت قراردیا تھا اس عظیم الشان فیصلے کی یاد میں18ستمبر کو تحفظ ناموس رسالت سیمینارمیرج ہٹ شادی ہال اقبال ٹاؤن لاہور میں منعقد ہوگاجسمیں ملی یکجہتی کونسل میں شامل جماعتوں کے رہنما شرکت کرینگے۔سیمینارکی تیاری کے سلسلے میں علماء کا مشاورتی اجلاس مرکز ختم نبوت مسلم ٹاؤن لاہورمیں ہوا ۔اجلاس میں ختم نبوت رابطہ کمیٹی کے اراکین ،مولانا قاری جمیل الرحمن اختر،مولانا عزیزالرحمن ثانی،مولانا قاری علیم الدین شاکر،مولانا سید ضیاء الحسن شاہ،پیرمیاں محمد رضوان نفیس،مولانا قاری ظہورالحق،مولانا عبدالنعیم،مولانا سعیدوقار،قاری محمدصدیق توحیدی سمیت کئی علماء کرام نے شرکت کی ۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مولاناعزیزالرحمن ثانی نے کہاکہ عقیدہ ختم نبوت اور ناموس رسالت کا تحفظ کرنے والے حضور ﷺ کی ذات اقدس کے چوکیدارہیں۔18ستمبرتحفظ نامو س رسالت سیمیناراسلام دشمن اور دین دشمن قوتوں کے لیے اتحاد و اتفاق کا پیغام ہوگا۔عقیدہ ختم نبوت اور ناموس رسالت کا ہرقیمت پر تحفظ کریں گے۔ مولانا قاری جمیل الرحمن نے کہا کہ قادیانیت کا فتنہ اسلام کے نام پر دھوکہ ہے، تمام علماء اور کارکنان 18ستمبرتحفظ نامو س رسالت سیمینارمیرج ہٹ ہال لاہور کی تیاری بھرپور اندازمیں کریں سیمینارکو کامیاب بنانا تمام مسلمانوں کی ذمہ داری ہے ۔ مولانا عبدالنعیم نے کہا کہ بہت ساری قربانیوں اور صبر آزما جدوجہد کے بعد7ستمبر1974 ء میں قادیانیوں کوآئینی اورقانونی طورپر غیرمسلم اقلیت قرار دیا گیا تھا، اپنے بزرگوں کی محنت کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے ۔اجلاس میں سیمینارکی تیاری کے لیے مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئیں ۔