نیب نے حدیبیہ کیس دوبارہ کھولنے کیلئے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کردی

7

قومی احتساب بیورو (نیب) نے حدیبیہ پیپر ملز ریفرنس دوبارہ کھولنے کے لیے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کردی۔

نیب نے شریف فیملی کیخلاف حدیبیہ اپیل سپریم کورٹ میں دائر کرتے ہوئے عدالت سے شریف خاندان کے خلاف دوبارہ تحقیقات کا حکم جاری کرنے کی درخواست کی ہے۔ نیب نے یہ اپیل لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف دائر کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ میں کیس کا میرٹ پر فیصلہ نہیں کیا گیا تھا لہذا حدیبیہ کیس میں دوبارہ تحقیقات ہونا ضروری ہیں۔

نیب نے اپنی اپیل میں کہا کہ پاناما کیس کی جے آئی ٹی رپورٹ میں مقدمے سے متعلق نئے شواہد سامنے آئے ہیں جن کی روشنی میں سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی جا رہی ہے، اپیل کو سماعت کے لئے منظور کیا جائے اور لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دے کر نیب کو کیس کی مزید تحقیقات کی اجازت دی جائے۔

نیب نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ نے حقائق کو دیکھے بغیر مقدمے کا فیصلہ کیا اور عدالت کے ایک جج نے دوبارہ تحقیقات کے حق میں فیصلہ دیا تھا، جب کہ قانونی معیاد میں اپیل دائر نہ کرنے کی قدغن بھی ختم کی جائے۔ نیب نے اپنی اپیل میں سابق وزیراعظم نوازشریف، وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف، رکن قومی اسمبلی حمزہ شہباز، شمیم اختر اور صاحبہ شہباز کو حدیبیہ پیپر ملز کیس میں فریق بنایا ہے۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے پاناما کیس کی سماعت کے دوران حدیبیہ پیپلز کیس کے معاملے میں چیرمین نیب پر شدید برہمی کا اظہار کیا تھا۔ عدالت عظمٰی نے اپنے فیصلے میں بھی نیب کو عدالتی چارہ جوئی کا حکم دیا تھا۔