شمالی کوریا سے مذاکرات وقت کا زیاں ہے،امریکی صدر

9

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے وزیرخارجہ کے شمالی کوریا سے جوہری پروگرام سے متعلق مذاکرات کو وقت کا زیاں قرار دے دیا ہے۔

امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن نے دورہ چین کے دوران میڈیا سے گفتگو میں کہا تھا کہ امریکا شمالی کوریا سے براہ راست رابطے میں ہے اور واشنگٹن اس بات پر غور کر رہا ہے کہ آیا پیانگ یانگ اپنے نیوکلیائی پروگرام کو ترک کرکے مذاکرات کی راہ اختیار کرنے پر آمادہ ہے یا نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم بالکل اندھیرے میں نہیں ہیں بلکہ شمالی کوریا سے مذاکرات کے تمام تر راستے کھلے ہیں۔

امریکی وزیر خارجہ کے بیان پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ردعمل دیتے ہوئے حریف ملک سے بات چیت کو وقت کی بربادی قرار دے دیا۔ ٹرمپ نے ٹوئٹر پیغام میں لکھا کہ میں اپنے بہترین وزیرداخلہ ریکس ٹلرسن سے کہتا ہوں کہ وہ شمالی کوریا کے ساتھ مذاکرات کی کوشش کرکے وقت ضائع نہ کریں۔ ہمیں جو کرنا ہوگا وہ کریں گے۔ ٹرمپ نے شمالی کوریا کے صدر کم جانگ اُن کےلیے ایک بار پھر ’’لٹل راکٹ مین‘‘ کا لقب استعمال کیا۔

واضح رہے کہ یہ پہلا موقع ہے جب شمالی کوریا کے معاملے پر امریکا کی متضاد پالیسی سامنے آئی ہے جس میں امریکی صدر اور وزیرداخلہ کے بیانات میں واضح اختلاف نظرآرہا ہے۔

دوسری جانب امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان ہیدر نوئرٹ کا کہنا تھا کہ شمالی کوریا کے اہل کاروں نے کوئی عندیہ نہیں دیا کہ انہیں مذاکرات میں دلچسپی ہے اور وہ جوہری ہتھیاروں کی تخفیف پر بات چیت کےلیے تیار ہیں۔