خواتین کا بھنویں بنوانا حرام ہے، درالعلوم دیوبند کا فتویٰ

16

بھارت میں دارالعلوم دیوبند نے خواتین کے بھنویں بنوانے کے فعل کو حرام قرار دیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق دارالعلوم دیوبند کے دارالافتاء کی جانب سے  جاری کردہ فتوے میں کہا گیا کہ مسلمان خواتین کا بھنویں بنوانا غیر اسلامی فعل ہے اس لیے وہ اس کام سے گریز کریں۔

بھارتی شہر سہارن پور سے تعلق رکھنے والے ایک شخص نے دارالعلوم دیو بند سے  خواتین کے بھنویں بنوانے اور بال کٹوانے کے بارے میں مسئلہ دریافت کیا تھا جس پر یہ فتویٰ جاری کیا گیا، مذکورہ شخص نے پوچھا کہ کیا شریعت کی رو سے میری اہلیہ کے لیے بھنویں بنوانا جائز ہے۔ سوال کے جواب میں دارالعلوم نے کہا کہ بھنویں بنوانا یا بھنوؤں کے بال اکھاڑنا دونوں ہی غیر اسلامی فعل ہیں اور شریعت کی رو سے حرام ہیں، اگر کوئی مسلمان خاتون یہ کام کرتی ہے تو وہ شریعت کی خلاف ورزی کررہی ہے۔

دارالفتاء کے سربراہ مولانا صادق قاسمی نے کہا کہ مسلمان خواتین بیوٹی پارلرز جانے سے بھی گریز کریں کیونکہ انہیں غیر مردوں کے سامنے اپنا بناؤ سنگھار دکھانے کی اجازت نہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح مسلمان مردوں کو داڑھی منڈوانے کی اجازت نہیں اسی طرح خواتین کے لیے بھی بھنویں بنوانا ممنوع ہے۔

مولانا صادق قاسمی کا کہنا تھا کہ بھارت میں مسلمان خواتین کے بیوٹی پارلر جانے کا رجحان بہت زیادہ بڑھ گیا ہے جو کوئی اچھی علامت نہیں اور اسے فورا بند ہونا چاہیے۔