نان سٹیٹ ایکٹرز سکیورٹی ترجیحات کو کنٹرول کرنا چاہتے ہیں: آرمی چیف

4

آرمی چیف نے کہا ہے کہ پاکستان کو اس وقت سٹریٹیجک چیلنجز کا سامنا ہے، نان سٹیٹ ایکٹرز ہماری سکیورٹی ترجیحات کو کنٹرول کرنا چاہتے ہیں، جب دشمن پاکستان کو بند کرنا چاہتا ہے تو وہ کراچی کو بند کر دیتا ہے۔

راولپنڈی: (فلک نیوز) آرمی چیف جنرل قمر باجوہ نے شہر اقتدار میں آئی ایس پی آر کے زیراہتمام معیشت اور سلامتی سے متعلق سیمینار سے خطاب کیا۔ اس موقع پر بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ریاستی رٹ کو چیلنج کرنے والے خطرات کو شکست دیدی، کراچی میں امن اولین ترجیح ہے۔ سیمینار سے خطاب میں آرمی چیف کا کہنا تھا کہ سکیورٹی اور معیشت کا آپس میں گہرا تعلق ہے، جب دشمن پاکستان کو بند کرنا چاہتا ہے تو وہ کراچی کو بند کرتا ہے، جب کراچی بند ہوتا ہے تو پورا پاکستان متاثر ہوتا ہے۔ آرمی چیف نے کہا کہ ہم نے امن کے لئے بہت سخت محنت کی، امید کرتے ہیں کہ کراچی میں معاشی سرگرمیاں تیزی سے بحال ہوں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ پائیدار ترقی کے لئے ملک بھر میں امن و امان قائم کرنا ہو گا۔ آرمی چیف نے مزید کہا کہ ہمارے مشرق میں جھگڑالو بھارت اور مغرب میں غیرمستحکم افغانستان ہے، مدارس کے طلباء کو معاشرے کا مفید شہری بنانے کے لئے اقدامات کرنا ہونگے۔ ملک کی معاشی صورتحال پر اظہار خیال کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ قومی پیداوار میں بہتری آئی لیکن قرضے آسمانوں کو چھو رہے ہیں، جاری کھاتوں کا توازن ہمارے حق میں نہیں، ٹیکس دینے والا عام آدمی بدلے میں ریاست سے مساوی سلوک چاہتا ہے۔ آرمی چیف نے یہ بھی کہا کہ ہم نے فاٹا میں کام مکمل اور بلوچستان میں شروع کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے سپورٹس اور ثقافت کے کئی میگا ایونٹس بھی کرائے ہیں، مشکل فیصلوں کے لئے تیار رہنا چاہئے۔