بنگلادیش میں طیارہ ہائی جیک کرکے ٹکرانے کا منصوبہ ناکام، پائلٹ گرفتار

5

بنگلا دیش کے سیکیورٹی اہلکاروں نے سرکاری ائر لائن کا طیارہ ہائی جیک کرکے اہم مقام سے ٹکرانے کا منصوبہ ناکام بنادیا ہے۔

بنگلا دیشی میڈیا کے مطابق قومی فضائی کمپنی ’بیمان بنگلا دیش ائرلائنز‘ کا طیارہ ہائی جیک کرکے اسے اہم سیاست دانوں کے گھر سے ٹکرانے کا منصوبہ ناکام بنایا گیا تھا۔ سیکورٹی اہلکاروں نے جہاز کے پائلٹ اور اس کی والدہ سمیت 4 ملزمان کو گرفتار کیا ہے جن پر ’کالعدم تنظیم جماعت المجاہدین بنگلا دیش‘ سے تعلق کا الزام بھی عائد کیا گیا ہے۔

گرفتار شدگان میں بنگلا دیش ائرلائنز کا فرسٹ آفیسر 31 سالہ صابر امام اور اس کی والدہ 55 سالہ سلطانہ پروین شامل ہیں۔ بنگلا دیش حکام کے مطابق ملزمان نے دوران تفتیش اعتراف کیا کہ طیارے کو ہائی جیک اور مسافروں کو مغوی بنا کر مشرق وسطیٰ لے جانے یا پھر ملک کے اعلیٰ سیاست دانوں کے گھروں سے ٹکرانے کا منصوبہ تھا۔

ملزمان سے ملنے والی معلومات کی بنیاد پر چھاپہ مارتے ہوئے جماعت المجاہدین بنگلہ دیش کے مزید مشتبہ افراد کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ فرسٹ آفیسر صابر امام 2014 سے ائر لائن میں ملازمت کررہا ہے اور بوئنگ 737 اڑا چکا ہے۔ بنگلا دیش میں 2013 کے بعد داعش اور القاعدہ کی جانب سے دہشت گردی کے حملوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔