سانحہ سیہون کا سہولت کار کراچی سے گرفتار

3

سی ٹی ڈی حکام کا کہنا ہے کہ لعل شہباز قلندر کے مزار پر خود کش حملہ کرنے والے ملزمان کا سہولت کار گرفتار کرلیا گیا ہے۔

فلک نیوز کے مطابق سی ٹی ڈی حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ سانحہ سیہون کے سہولت کار کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ سی ٹی ڈی حکام کا کہنا ہے کہ مصدقہ اطلاعات پر کارروائی کے دوران موٹرسائیکل پر سوار ملزم کو بلوچستان سے کراچی میں داخل ہوتے ہوئے حب ندی کے قریب سے گرفتار کیا گیا۔

ملزم کے قبضے سے ہینڈ گرنیڈ اور دھماکا خیز مواد بھی برآمد ہوا جب کہ ملزم کی شناخت نادر عرف مرشد کے نام سے ہوئی۔ سی ٹی ڈی حکام کے مطابق دوران تفتیش انکشاف ہوا ہے کہ ملزم نادر جاکھرانی سہون میں لعل شہباز قلندر کے مزار پر دھماکے کا اہم ملزم ہے اور سانحہ میں ملوث خود کش حملہ آوروں نے نادر جاکھرانی کے گھر کندھ کوٹ میں پناہ لی تھی۔

دھماکے کی منصوبہ بندی بلوچستان کے علاقے ڈیرہ مراد جمالی میں کی گئی۔ سی ٹی ٹی نے ملزم کو دھماکا خیز مواد رکھنے کے الزام میں عدالت میں پیش کیا جہاں عدالت نے ملزم نادر جاکھرانی کو 5 روزہ ریمانڈ پر سی ٹی ڈی کے حوالے کردیا۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے سی ٹی ڈی ٹیم کے لیے 50 لاکھ روپے انعام کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اہلکاروں نے سیہون دھماکے کے ملزم کو گرفتار کرکے بڑا کام کیا ہے۔