حکمران چند افراد کا دھرنا ختم نہیں کرا سکتے تو اقتدار چھوڑ دیں: خورشید شاہ

17

حکومتی رٹ ختم ہو چکی، نواز شریف کو آئینی راستہ اختیار کرنا چاہئے، اسحاق ڈار مستعفی ہو جائیں: اپوزیشن لیڈر

سکھر: (فلک نیوز) خورشید شاہ نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں اخلاقی و سیاسی جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے فوری طور پر مستعفی ہوجانا چاہیئے۔ انہوں نے کہا نواز شریف کو غیر آئینی راستہ اختیار کرنے کی بجائے عدالت کے فیصلوں کو من وعن قبول کرنا چاہیئے، قبل از وقت انتخابات کا مطالبہ عمران خان کا حق ہے وہ کل اگر سورج کا مغرب سے نکلنے کا مطالبہ کریں تو وہ بھی ان کا حق ہوگا۔ خورشید شاہ نے سکھر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ کچھ لوگوں نے اسلاآباد کو سیل کیا ہوا ہے، حکومت کی رٹ ختم ہو چکی ہے، اگر حکومت یہ دھرنا ختم نہیں کراسکتی تو اقتدار چھوڑ دے۔انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ پارلیمنٹ اپنی آئینی مدت پوری کرے، پیپلزپارٹی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ اس کی حکومت نے اپنے پانچ سال پورے کیے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ پانچ سالوں اور موجودہ چار سالوں کے دوران جتنی ترقی سندھ میں تعلیم و صحت کے شعبے میں میں ہوئی ہے اتنی ترقی کسی اور صوبے میں نہیں ہوئی۔ اپوزیشن لیڈر نے کہا عمران خان کے صوبے میں تو ایک عورت کو اںصاف نہیں مل سکا، ان کے بہتر پولیسنگ کے دعوؤں کا بھی پول کھل چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ احتساب برابری کی بنیاد پر سب کا ہونا چاہیئے، پرویزمشرف کو خود نواز شریف نے چھوڑا، وہ اس با رے میں اپنے سابقہ وزیر سے پوچھ لیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اتحاد ہر الیکشن میں بنتے اور ٹوٹتے ہیں مگر ہمارے لوگ اتنی سیانے اور سمجھدار ہوچکے ہیں کہ وہ سب کچھ ہم سے زیادہ جانتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا قبل ازوقت الیکشن ہونے یا نہ ہونے کا خواب منظور وسان نے دیکھا ہے اور وہی اس کی تعبیر بھی بتا سکتے ہیں۔ خورشید شاہ نے کہا ہم ملک میں صاف ستھری سیاست کرنا چاہتے ہیں اور کسی کے معاملات میں دخل اندازی کے نتائج اچھے نہیں ہوتے۔