بحرہند میں طوفان اوکھی سے سندھ میں بارشوں کا امکان ہے، محکمہ موسمیات

264

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ بحرہند میں اٹھنے والے اوکھی طوفان سے پاکستان کو کوئی خطرہ نہیں تاہم طوفان کے باعث سندھ میں شدید بارشوں کا امکان ہے۔

فلک نیوز کے مطابق بحرہند میں بننے والے طوفان اوکھی نے بھارت میں بڑے پیمانے پر تباہی مچادی ہے، طوفان سے سب زیادہ تامل ناڈو اور کیرالہ متاثر ہوئے ہیں اور اب تک شدید بارشوں اور طوفان کے باعث 17 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جب کہ آئندہ 24 گھنٹوں میں طوفان کی شدت میں اضافے کا خدشہ ہے۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ اوکھی طوفان اس وقت کراچی کے جنوب مشرق میں 14 سو 42 کلومیٹر دوری پر بھارتی شہر ممبی کے قریب موجود ہے جو کسی بھی وقت ممبئی کے ساحل سے ٹکرا سکتا ہے جب کہ بھارتی گجرات بھی طوفان کے خطرے سے دوچار ہے تاہم پاکستان کے بھارت سے ملحقہ علاقوں کو اوکھی طوفان سے کوئی خطرہ نہیں لیکن طوفان کے باعث بدین، تھرپارکر اور مٹھی میں شدید بارشیں ہوسکتی ہیں۔

محکمہ موسمیات کے ریجنل ڈائریکٹر شاہد عباس کا کہنا ہے کہ بحرہند میں بننے والا طوفان بحیرہ عرب میں جنوب مشرق کی جانب بڑھ رہا ہے اور  اس کے اثرات ٹھٹھہ اور بدین میں بادلوں کی صورت  3 اور 4 دسمبر کو نظر آئیں گے اور 20 سے 30 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چلنے کا امکان ہے جس کے باعث سمندر میں بھنور پیدا ہوسکتا ہے تاہم 4 دسمبرکے بعد طوفان کی شدت کم ہونا شروع ہوجائے گی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق بھارت سے ملحقہ علاقوں میں ممکنہ طور پر ماہی گیر پریشانی میں پھنس سکتے ہیں اس لئے کسی بھی ناخوشگوار سانحے کے خدشے کے پیش نظر وارننگ جاری کرتے ہوئے 5 دسمبر کی رات تک چند علاقوں، کراچی، بوج، کیٹی بندر اور گھوڑہ باری میں ماہی گیروں کو سمندر میں جانے سے روک دیا گیا ہے۔