نارویجن پاکستانیوں کا اعزاز، ناروے نے پہلی بار نیزہ بازی ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا

12

رپورٹ۔عقیل قادر۔نمائندہ۔ فلک نیوز۔ ناروے
نیزہ بازی کا کھیل یوں تو روایتی طور پر پاکستان کے علاوہ دنیا کے کئی ممالک میں مقبول ہے مگر ناروے جیسے سرد ملک میں بھی یہ کھیل مقبولیت کی طرف گامزن ہے، ناروے میں اسکی مقبولیت کی اہم وجہ نارویجن پاکستانیوں کی نیزہ بازی میں دلچسپی ہے جو کئی سالوں سے اس کھیل کے فروغ کے لیے محنت کر رہے ہیں۔ناروے نے پہلی بار نیزہ بازی کے ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا اور ناروے ٹیم تمام نارویجن پاکستانیوں پر مشتمل تھی۔ ۔ سعودی عرب کے شہر دمام میں جاری کوالیفائنگ راونڈ میں ناروے ٹیم نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے نیزہ بازی کے ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کر لیا۔ کوالیفائنگ راونڈ میں امریکہ، سعودی عرب، مصر اور ناروے کی ٹیموں نے بھی شرکت کی۔ناروے کے علاوہ سعودی عرب کی ٹیم نے ورلڈ کپ کے لیے کوالیفائی کیا جو ستمبر میں دوبئی میں منعقد ہو گا۔ناروے کی چار رکنی ٹیم میں ڈاکٹر مامون اکرم گوندل، ڈاکٹر زبیر گوندل، چوہدری سرفراز احمد اور چوہدری احمد خان گوندل شامل تھے۔ ناروے ٹیم کے کپتان ڈاکٹر مامون اکرم پلیئر آف دی ٹورنامنٹ قرار پائے۔ اوسلو اور گردونواح سے تعلق رکھنے ولی پاکستانی کمیونٹی کی سرکردہ شخصیات نے ٹیم کو پاکستان اور ناروے کا نام روشن کرنے پر دلی مبارکباد پیش کیں اور دلی مسرت کا اظہار کیا۔ پاکستانی سفیر رفعت مسعود، ڈاکٹر مامون اکرم گوندل اور دیگر نے فلک نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔