حیا ء ایمان کا حصہ ہے اور ویلنٹائن ڈے جیسے بے ہودہ تہوار منانا شرم و حیاء کا جنازہ ہے، رفاقت حقانی

34

معاشرے میں افراتفری ،ہمارے زوال کا سبب اسلامی تعلیمات سے منہ پھیر کر اسلام کے منافی اقدامات سے لو لگانا ہے ، خطاب
حیاء کے کلچر کو عام کرنے اور غیر اسلامی تہواروں کی روک تھام کے لیے حکومتی سطح پر موثراقدامات کئے جائیں ،حکومت سے مطالبہ
اٹک (فلک نیوز )حیا ء ایمان کا حصہ ہے اور ویلنٹائن ڈے جیسے بے ہودہ تہوار منانا شرم و حیاء کا جنازہ اور مہذب معاشرے کا ناسورہے، سرکار علیہ الصلوۃ والتسلیم نے حیاء اور ایمان کو لازم و ملزوم قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ جب ان دونوں میں سے کوئی ایک اٹھا لیا جائے تو دوسرا خود بخود اٹھ جاتا ہے ،اسلامی جمہوریہ پاکستان میں مغربی اور غیراسلامی ماحول پیدا کرنے کی سازش کی جا رہی ہے،معاشرے کور عریانی و فحاشی اور بے راہ روی سے بچانے کے لئے تمام طبقات اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، ان خیالات کا اظہارجے یو پی راولپنڈی ڈویژن کے جنرل سیکرٹری ممتاز مذہبی سکالر علامہ مفتی ابوطیب رفاقت علی حقانی بانی و پرنسپل جامعہ حقانیہ ظاہرالعلوم اٹک کینٹ نے اپنے ایک بیان میں کیا ، انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ حیاء کے کلچر کو عام کرنے اور غیر اسلامی تہواروں کی روک تھام کے لیے حکومتی سطح پر موثراقدامات کئے جائیں ،علامہ حقانی نے کہا کہ علماء اور والدین نوجوان نسل کی اخلاقی تعلیم و تربیت پر توجہ دیں سچے مسلمان کا ہر دن حیاء ڈے ہوتا ہے ، آج ہر گھر میں بے برکتی، نااتفاقی ، بے چینی، معاشرے میں افراتفری ،ہمارے زوال کا سبب اسلامی تعلیمات سے منہ پھیر کر اسلام کے منافی اقدامات سے لو لگانا ہے ، ضرورت اس امر کی ہے کہ غیراسلامی اور بے ہودہ تہواروں کا بائیکاٹ کیا جائے اور تعلیمات مصطفی کے مطابق زندگی بسر کی جائے