ویلنٹائن ڈے منانا غیر اسلامی نہیں؛ سعودی عالم دین

17

سعودی عالم دین احمد قاسم الغامدی نے ویلنٹائن ڈے (جسے محبت کا عالمی دن بھی کہاجاتا ہے) کے حوالے سے کہا ہے کہ یہ ایک  سماجی تہوار ہے اوراسے منانے میں کوئی شرعی پابندی نہیں۔

مکہ مکرمہ میں امربالمعروف و نہی عن المنکر کمیٹی کے سابق ڈائریکٹرجنرل قاسم الغامدی نے عرب ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم عالمی سطح پر کئی دن مناتے ہیں مثلاً والدین کا عالمی دن، ماں کا عالمی دن، استاد کا عالمی دن یاخواتین کا عالمی دن وغیرہ، یہ سب سماجی نوعیت کے  ایام ہیں ان کا براہ راست مذہب کے بنیادی عقائد کے ساتھ کوئی تعلق نہیں اور نا ہی اسلام میں ایسی سماجی و ثقافتی سرگرمیوں کی کوئی ممانعت ہے۔ ویلنٹائن ڈے یا محبت کے عالمی دن کو منانے میں بھی کوئی شرعی پابندی نہیں۔

علامہ قاسم الغامدی نے کہا کہ اسلام بھی لوگوں کے درمیان اچھی بات کو عام کرنے کی تلقین کرتا ہے۔ اگر آپ کسی کو کسی بھی حوالے سے مبارکباد پیش کرتے ہیں تو اس میں کوئی حرج نہیں، خیر اور بھلائی کی بات صرف مسلمانوں سے نہیں بلکہ یہود و نصاریٰ کے ساتھ بھی کی جاسکتی ہے، البتہ براہ راست جنگ کرنے اور لڑنے والے عناصر اس میں شامل نہیں۔ انہوں نے کہا نبی اکرم ﷺ اپنے یہودی پڑوسیوں کے ہاں آتے جاتے رہتے اور ان کے مسائل کے حل میں ان کی مدد کرتے۔ اللہ کافرمان بھی ہے’’لوگوں سے اچھے طریقے سے بات کرو‘‘۔

علامہ قاسم الغامدی کا کہنا تھا کہ ویلنٹائن ڈے کے مخالفین اسے اسلام کے ساتھ جوڑتے ہیں اور دعویٰ کرتے ہیں کہ یہ جاہلیت کے تہواروں میں سے ایک ہے، اگر کوئی  شخص تہوار منانے کی کوشش کررہاہے جس کا اسلام میں کوئی وجود نہیں تو وہ اسلامی تعلیمات کی خلاف ورزی ہے۔ مگر ویلنٹائن ڈے ایک سماجی تہوار ہے، اس تہوار کے موقعے پر ہم ایک دوسرے کے لیے محبت کے جذبات کا اظہار کرتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں الغامدی نے کہا کہ یہودیوں اور عیسائیوں سمیت دیگر غیر مسلموں کو عید اور تہواروں پر ہم انہیں مبارکباد پیش کرسکتے ہیں۔