گوانتا ناموبے میں قید پاکستانی کو فوری رہا کیا جائے، اقوام متحدہ

23

اقوامِ متحدہ کی کونسل برائے انسانی حقوق (او ایچ سی ایچ آر) نے مطالبہ کیا ہے کہ امریکا کے بدنامِ زمانہ جیل گوانتاناموبے میں قید پاکستانی نژاد عمار بلوچ کو فوری طور پر رہا کیا جائے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق انسانی حقوق کی کونسل کے 5 ماہرین کے گروپ نے اپنے تحریری مطالبے میں لکھا کہ پاکستانی نژاد کویتی شہری عمار المعروف عبدالعزیز علی نائن الیون ( 11 ستمبر 2001  میں امریکا کے ورلڈ ٹریڈ سینٹر پر ہونے والے حملوں) کی سازش میں مبینہ طور پر ملوث خالد شیخ محمد کا بھتیجا ہے جسےامریکا نے اپنی بدنامِ زمانہ جیل گوانتا ناموبے میں 2006 سے قید کررکھا ہے تاہم عمار بلوچ  کو حراست میں رکھنا ناصرف ظالمانہ اقدام ہے بلکہ انسانی حقوق کے بین الاقوامی قوانین کی سنگین خلاف ورزی ہے۔

تحریر میں مؤقف اپنایا گیا کہ امریکی عدالتی نظام کے تحت حراست میں رکھے جانے والے تمام افراد کو قانون کے تحت غیر جانبدارانہ سماعت کی ضمانت دی جاتی ہے تاہم عمار کو طویل عرصے سے حراست میں رکھنے کے باوجود امتیازی بنیادوں پر اس کے غیر ملکی شہریت اور مذہب کی بنیاد پر یہ حقوق نہیں دیے گئے اور انہیں اپنے مناسب دفاع کی تیاریوں کی وہ سہولیات مہیا نہیں جو استغاثہ کو حاصل ہے ہیں، یہ تمام صورتحال شہری حقوق، سیاسی معاہدوں اور انسانی حقوق کے بین الاقوامی اعلامیے کی شق نمبر 13 کی خلاف ورزی ہے۔