نیب کا اہم اجلاس، شریف خاندان کے خلاف تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا

13

اسلام آباد: (فلک نیوز) قومی احتساب بیورو (نیب) کے اہم اجلاس میں شریف برادران، حمزہ شہباز، کلثوم نواز اور مریم نواز سمیت دیگر کے خلاف تحقیقات کے آغاز کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

چیئرمین نیب جاوید اقبال کے زیرِ صدارت نیب ایگزیکٹو بورڈ کا اہم اجلاس ہوا جس میں شریف برادران، حمزہ شہباز، کلثوم نواز اور مریم نواز کے خلاف تحقیقات کے آغاز کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ چیئرمین نیب کا کہنا تھا کہ تمام انکوائریاں مبینہ الزامات کی بنیاد پر ہیں، قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائیں گے۔

اجلاس کے بعد جاری اعلامیے کے مطابق نیب کے ایگزیکٹو بورڈ نے سابق وزیرِ اعظم نواز شریف کیخلاف ضمنی ریفرنسز کی منظوری دے دی ہے۔ ان کیخلاف العزیزیہ سٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنسز کے ضمنی ریفرنسز پہلے ہی دائر ہیں جبکہ چودھری شوگر ملز کی انکوائری کی بھی منظوری دیدی گئی ہے۔ دوسری جانب سرکاری ہیلی کاپٹر کے استعمال پر عمران خان کیخلاف بھی انکوائری شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

ترجمان نیب کے مطابق اجلاس میں وزیرِ اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف کیخلاف مشتبہ رقوم کی منتقلی کے معاملے میں انکوائری کی منظوری دیدی گئی ہے۔ اجلاس میں احد چیمہ، پیراگون سٹی کی انتظامیہ اور پیپلز پارٹی کے سینیٹر عثمان سیف اللہ کیخلاف بھی انکوائری کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔

دوسری جانب نیب نے اسحاق ڈار، انوشہ رحمان، چیئرمین پی ٹی اے ڈاکٹر اسماعیل، وزیرِ اعلیٰ خیبر پختونخوا اور چیف سیکریٹری خیبر پختونخوا کیخلاف انکوائری کی منظوری دیدی ہے۔ پرویز خٹک پر مالم جبہ میں 275 ایکڑ سرکاری جنگلات کی زمین لیز پر دینے کا الزام ہے۔

ان کے علاوہ ڈی جی کوئٹہ ڈویلپمنٹ اتھارٹی نور احمد اور دیگر کیخلاف تحقیقات کی منظوری دی گئی ہے۔ ملزمان پر چلتن ہاؤسنگ سکیم کوئٹہ میں چائنا کٹنگ اور غلط الاٹمنٹ کا الزام ہے۔