پاکستان انڈونیشیا کو 50 ہزار ٹن چاول برآمد کرے گا

52

پاکستان کے 8 ایکسپورٹرز نے انڈونیشیا میں چاول کے ٹینڈر حاصل کرلیے اب پاکستان انڈونیشیا کو 50 ہزار ٹن چاول فراہم کرے گا۔

انڈونیشیا کے سرکاری ادارے بلوگ کے جاری کردہ ٹینڈر پر پاکستان کے 8 برآمد کنندگان نے کامیابی حاصل کرلی جس کے تحت پاکستان سے 50 ہزار میٹرک ٹن سفید چاول برآمد کیے جائیں گے جس میں سے 12500 میٹرک ٹن 5 فیصد ٹوٹا چاول 460 ڈالر اور 37500 میٹرک ٹن 15 فیصد ٹوٹا چاول 450 ڈالر کے حساب سے دیے جائیں گے۔

بلوگ کی جانب سے جن پاکستانی چاول کے برآمد کنندگان کو انڈونیشیا میں چاول درآمد کرنے کا ٹینڈر جاری کیا ہے ان میں میسرز غریب سنز پرائیوٹ لمیٹڈ، حسن علی رائس ایکسپورٹ کمپنی، میسکے اینڈ فیمٹی ٹریڈنگ کمپنی پرائیوٹ لمیٹڈ، کے کے رائس ملز پرائیوٹ لمیٹڈ، ایم ایم کموڈیٹیز، ال حمزہ ٹریڈنگ کمپنی، کونول پاکستان پرائیوٹ لمیٹڈ، کنگور ٹریڈرز شامل ہیں جو مشترکہ طور پر 6250 میٹرک ٹن کے حساب سے مجموعی طور پر 50 ہزار میٹرک ٹن وائٹ رائس برآمد کریں گے۔

رائس ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن آف پاکستان کے قائم مقام چیئرمین حمد اللہ خان ترین نے بتایا کہ وفاقی وزارت تجارت اور ایسوسی ایشن کی جدوجہد و موثر حکمت عملی کی بدولت انڈونیشیا کے حکومتی ادارے بلوگ کی جانب سے پاکستان کو مذکورہ برآمدی آرڈر حاصل ہوا ہے جس سے پاکستانی چاولوں کی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ہوگا۔

حمد اللہ خان ترین نے بتایا کہ سال 2015ء میں ایسوسی ایشن کے نمائندہ وفد نے رفیق سلیمان کی قیادت میں انڈونیشیا کا دورہ کیا تھا اور وہاں کے حکومتی اداروں کے اہم عہدے داروں سے ملاقات کر کے پاکستانی چاول کی برآمدات کے لیے راہ ہموار کی تھی۔ اس ٹینڈر کے نتیجے میں پاکستان کو تقریباً 2 کروڑ 25 لاکھ ڈالر کا قیمتی زر مبادلہ حاصل ہوگا جو پاکستان کے تجارتی خسارے کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوگا، انڈونیشیا کی مارکیٹ میں پاکستانی چاول کی کھپت موجود ہے جس کا بھر پور فائدہ اٹھانے کی اشد ضرورت ہے۔