اسلامی جمہوریہ پاکستان کے قیام کا مقصد نظام مصطفی کا عملی نفاذ تھا ،علامہ رفاقت حقانی

27

پاکستان کا مقدر نظام مصطفی کا نفاذہے، سیکولرازم کی باتیں کرنے والوں کو منہ کی کھانی پڑے گی ،جے یوپی
جمعیت علماء پاکستان نظام مصطفی کے عملی نفاذکی جدوجہد جاری رکھے گی،70ویں یوم تاسیس پر عزم نو

اٹک(فلک نیوز ) جمعیت علماء پاکستان کے 70 ویں یوم تاسیس کے موقع پر ڈویژنل جنرل سیکرٹری علامہ ابوطیب رفاقت علی حقانی ، ضلعی صدر حاحبزادہ حافظ نعیم احمد دریاء شریف، ضلعی جنرل سیکرٹری علامہ نیاز حسین اعوان جنرل کونسلر، ممبر مرکزی مجلس شوری ایس اے چشتی، رہنماء اے ٹی آئی ڈاکٹر ضیاء الرحمن نورانی، حافظ مہر خان چشتی جنرل کونسلر،علامہ ظفر اقبال حقانی، انجینئر محمد طیب میلادی، قاری محمدیاسر اعوان سیکرٹری اطلاعات ودیگر رہنماؤں نے اپنے مشترکہ بیان میں کہاکہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کے قیام کا مقصد نظام مصطفی کا عملی نفاذ تھا جس کے لئے جمعیت علماء پاکستان 1948سے جدوجہد کر رہی ہے ، قائد ملت اسلامیہ امام الشاہ احمد نورانی و اکابرین کی قیادت میں جمعیت علماء پاکستان نے 1970میں قومی اسمبلی میں پہنچ کر مسلمان کی تعریف دستورمیں شامل کرانے کے ساتھ 200سے زائد اسلامی قوانین کو آئین کا حصہ بنوایا ،آئین میں پاکستان کواسلامی جمہوریہ پاکستان کا نام دلوایااور سرکاری مذہب اسلام قرار دلوایا،ان شاء اللہ وہ دن دور نہیں جب امام نورانی ؒ کے فرمان کے مطابق اکیسویں صدی غلبہ اسلام کی صدی ثابت ہوگی اور صرف پاکستان ہی میں نہیں بلکہ عالم اسلام میں نظام مصطفی کا عملی نفاذ ہوگا، ملک پاکستان کا مقدر نظام مصطفی کا عملی نفاذہے، سیکولرازم ، لبرل ازم ، سوشلزم کی باتیں کرنے والوں کو منہ کی کھانی پڑے گی ، انشاء اللہ اسلاف کی یادگار جمعیت علماء پاکستان کے پلیٹ فارم سے نظام مصطفی کے عملی نفاذ اور مقام مصطفیٰ کے تحفظ کیلئے جدوجہد جاری رکھیں گے۔