اصلی چمگادڑ کی طرح پرواز کرنے والی روبوٹ چمگادڑ

70

جرمن ماہرین نے ایک خاص قسم کی چمگادڑ ’فلائنگ فوکس‘ کا جدید روبوٹ ماڈل بنایا ہے جو ہوبہو اسی انداز میں پرواز کرتا ہے۔

دنیا کے کئی ممالک میں پائی جانے والی اس چمگادڑ کے ماڈل کو ماہرین نے ایک چیلنج سمجھ کر قبول کیا ہے۔ اس کے پروں کی چھلی بہت نفیس ہوتی ہے اور دورانِ پرواز یہ اپنی انگلیوں کی مدد سے اس جھلی کے خم کو قابو کرتی ہے اور بہت پھرتی سے چکر کاٹتی ہے۔ یہاں تک کہ بہت سست پرواز کے دوران بھی فلائنگ فوکس اوپر کی جانب اٹھتی رہتی ہے۔ اسی بنا پر ماہرین نے اس پر تحقیق کرکے اس کا اڑن روبوٹ تیار کیا ہے۔

جرمن کمپنی فیسٹو نے اسے تیار کیا ہے جبکہ اس روبوٹ چمگادڑ کا وزن صرف 580 گرام ہے اور لمبائی 87 سینٹی میٹر ہے۔ اس کے پروں کی لمبائی 228 میٹر ہے۔ اس میں دو طرح کی حرکات کو مدِنظر رکھا گیا ہے جو پرائمری اور سیکنڈری کائنامیٹکس ہیں۔ انہیں سمجھنا بہت مشکل ہوتا ہے لیکن ماہرین نے اس کی طبیعیات کو سمجھتے ہوئے یہ روبوٹ تیار کیا ہے۔

ماہرین نے خاص مٹیریل سے چمگادڑ کے پر بنائے ہیں جو ایک جانب بہت ہلکے لیکن مضبوط اور لچکدار بھی ہیں۔ لچکدار مٹیریل کو 45000 مقامات پر باہم جوڑا گیا ہے، اس طرح مٹیریل کو نقصان پہنچنے کے باوجود بھی چمگادڑ پرواز کرتی رہتی ہے۔

ماہرین کا خیال ہے کہ روبوٹ چمگادڑ کو کئی اہم کاموں میں استعمال کرنے کے ساتھ ساتھ اس سے پرندوں اور دیگر جانداروں کی پیچیدہ اڑان سمجھنے میں بھی مدد مل سکے گی۔