مسلمان بچی کی حمایت پر کرینہ کپور کو تنقید کا سامنا

12

ممبئی(فلک نیوز) بالی ووڈ اداکارہ کرینہ کپور ویسے تو سماجی مسائل پرکم بات کرتی ہیں لیکن مقبوضہ کشمیر میں 8 سالہ ننھی آصفہ کیساتھ ہوئی درندگی نے کرینہ کو بھی آواز اٹھانے پر مجبور کردیا۔انہوں نے بھی دیگر فنکاروں کی طرح ہاتھ میں پلے کارڈ اٹھاکر آصفہ کیساتھ اظہار یکجہتی کیا ۔ کارڈ پر لکھا تھا’’ میں ہندوستان ہوں، میں شرمندہ ہوں، 8 سالہ آصفہ کیساتھ ہوئی اجتماعی زیادتی اور قتل پر ہمیں ہمارے بچوں کیلئے انصاف چاہئے ۔‘‘تاہم کرینہ کپور کوآصفہ کیلئے انصاف کا مطالبہ کرنا مہنگا پڑگیا۔ سوشل میڈیا پر انتہا پسندانہ سوچ رکھنے والوں نے کرینہ کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا ’’کرینہ کو دراصل ہندو ہوتے ہوئے ایک مسلمان سے شادی کرنے اور ایک مسلمان شخص کے بچے کی ماں ہونے پر شرمندہ ہونا چاہیے جسکانام ’’تیمور‘‘ہے ۔کرینہ کی حمایت میں انکی ساتھی اداکارہ سوارا بھاسکر نے ٹویٹ کرنیوالے صارف کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا تمہیں اپنے ہونے پر شرمندہ ہوناچاہیے ، خدا نے تمہیں دماغ دیا ہے جس میں تم اپنی مرضی سے نفرت بھرتے ہو اور منہ دیا ہے جس سے تم نفرت انگیز باتیں بولتے ہو، تمہیں شرمندہ ہونا چاہیے کہ تم ایک بھارتی اور ہندو ہو‘‘۔