ایک صدی تک خدمات دینے والے گورنمنٹ کالج سرگودہا کو بحال کیا جائے, اشرف عاصمی ایڈووکیٹ کا وزیر تعلیم پنجاب سے مطالبہ

19

ایک صدی تک خدمات دینے والے گورنمنٹ کالج سرگودہا کو بحال کیا جائے۔ نئے سیشن سے فرسٹ ائیر کی کلاسوں کا اجرا کیا جائے ۔ سرگودہا کی عوام کو پرائیوٹ کالجوں کی لوٹ مار سے بچایا جائے
انسانی حقوق کے علمبردار اشرف عاصمی ایڈووکیٹ کا وزیر تعلیم پنجاب سے مطالبہ
( لاہور )انسانی حقوق کے علمبردار اشرف عاصمی ایڈووکیٹ نے وزیر تعلیم پنجاب سے مطالبہ کیا ہے۔کہ ایک صدی تک خدمات دینے والے گورنمنٹ کالج سرگودہا کو بحال کیا جائے۔ نئے سیشن سے فرسٹ ائیر کی کلاسوں کا اجرا کیا جائے ۔ سرگودہا کی عوام کو پرائیوٹ کالجوں کی لوٹ مار سے بچایا جائے۔ لاہور ہائی کورٹ میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے اشرف عاصمی کا کہنا تھا کہ گورنمنٹ کالج کو ختم کرنا کسی طور بھی مناسب نہ تھا۔ اگر یونیورسٹی اِس کیمپس میں بنادی گئی تھی تو بلڈنگ کے کچھ حصے میں گورنمنٹ کالج کا سٹیٹس برقرار رکھا جاسکتا تھا۔ اشرف عاصمی نے مزید کہا کہ پورئے سرگودہا ڈویژن کے لیے بے مثال تعلیمی خدمات دینا والا اب کوئی بھی کالج نہ رہا ہے۔ پرائیوٹ کالجوں کی بھرمار نے تعلیم کو مکمل طور پر تا کاروبار بنا دیا ہے۔ اب طالب علم تعلیمی ادارے کا چناؤ فیس کے حساب سے کرتے ہیں ۔چند مرلے کے اِن کالجوں نے سرگودہا کے شاہنوں سے وہ آن شان چھین لی ہے جو گورنمنٹ کالج کے ہوتے ہوئے ہر امیر غریب کو حاصل تھی۔ وزیر تعلیم سے گزارش ہے کہ سرگودہا کی مین بلڈنگ میں فرسٹ اےئر کی کلاسز کا اجراء کردیا جائے اور گورنمنٹ کالج کی حیثت بحال کی جائے۔ یونیورسٹی کے لیے علحیدہ کیمپس بنا کر یونیورسٹی کو بتددریج منتقل کرئے اور گورنمنٹ کالج کا مقام و مرتبہ بحال کیا جائے۔ سرگودہا کے مکینوں سے معیاری گورنمنٹ کالج کا چھن جانا بہت بڑی بد نصیبی ہے۔