اب کسی کا بھی چوری شدہ فون استعمال نہیں ہوسکے گا

20

لاہور  (ویب ڈیسک) ٹیلی کام پالیسی 2015 کے زیرتحت پاکستان ٹیلی کمیونیکشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نے یہ نظام متعارف کرایا گیا ہے جس پر موبائل فون ڈیوائسز کی رجسٹریشن ہوسکے گی، جبکہ چھن جانے والے، جعلی یا اسمگل فونز کی شناخت اور انہیں بلاک کرنا بھی ممکن ہوگا۔

پاکستان میں چھینے گئے یا اسمگل موبائل فونز کو بلاک کرنے کے لیے جدید ترین نظام ڈیوائس آئیڈینٹی فیکیشن رجسٹریشن اینڈ بلاکنگ سسٹم (ڈی آئی آر بی ایس) کو متعارف کرا دیا گیا ہے۔ پی ٹی اے حکام کا کہنا تھا کہ اس نظام کی بدولت چوری شدہ فونز کو ہمیشہ کے لیے بند کیا جائے گا جبکہ موبائل سروس کا معیار بھی بہتر ہوگا۔

فلک نیوز کے مطابق پی ٹی اے ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد میں ڈی آئی آر بی ایس کا افتتاح کیا گیا اور اس موقع پر چیئرمین پی ٹی اے محمد نوید نے کہا کہ اس نظام کے نفاذ سے غیر معیاری، جعلی، غیرقانونی طور پر درآمد شدہ موبائل فونز کی شناخت، رجسٹریشن اور موبائل فون نیٹ ورکس پر نان کمپلینٹ ڈیوائسز کی غیر قانونی درآمد کی حوصلہ شکنی، قانونی درآمدات اور موبائل ڈیوائس استعمال کنندگان اور سکیورٹی کی مجموعی صورت حال میں بہتری آئے گی۔

دوسری جانب چیئرمین پی ٹے اے کا دعویٰ تھا کہ اس نظام کی بدولت ملک میں موبائل چوری یا چھینے کی وارداتوں کا خاتمہ ہوگا، بلکہ ان کا کھوج لگانے میں بھی مدد ملے گی۔ اس نظام کے دوسرے مرحلے میں ان ڈیوائسز کی چانچ پڑتال کی جائے گی جو اس وقت صارفین کے استعمال میں ہیں۔