خاتون سپاہی کے بازو پر کان اگا دیا گیا

23

طبّی ماہرین نے ایک حادثے میں کان سے محروم ہوجانے والی امریکی خاتون سپاہی کے بازو میں نئے قدرتی کان کی افزائش کردی جسے بعد ازاں اپنی جگہ ٹرانسپلانٹ کردیا گیا۔

خبروں کے مطابق امریکی خاتون سپاہی ٹیکساس سے واپسی پر ایک کار حادثے کا شکار ہوگئی تھیں۔ ہولناک حادثے میں ان کی زندگی تو بچالی گئی تھی تاہم وہ اپنے کانوں سے محروم ہو گئی تھیں۔ جس کے بعد پلاسٹک سرجنز نے خاتون کی اپنی کرکری ہڈیوں (کارٹیلیجز) سے نئے اور قدرتی کان کے افزائش کا بیڑہ اُٹھایا۔ سرجن نے پہلے مرحلے میں مریضہ کے بازو پر جلد کو پھیلایا اور دوسرے مرحلے میں پسلی کی نرم ہڈیوں کے مخصوص حصوں کو اتارتے ہوئے انہیں بازو کی جلد میں داخل کیا۔

یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ تھا جس میں آرمی سرجن اور پیرامیڈیکل اسٹاف نے کسی انسانی عضو کی اسی شخص کے ٹشوز کی مدد سے افزائش کی ہو۔ آرمی سرجن نے خاتون کی پسلی کی ہڈی سے کرکری ہڈی کے ٹشوز حاصل کرکے بازو میں پیوند کردیئے جہاں قدرتی طور پر نیا کان اُگ آیا جسے بازو سے نکال کر چہرے پر ٹرانسپلانٹ کردیا گیا۔

واضح رہے کہ کان کے ٹرانسپلانٹ کے بعد دو مزید آپریشن کیے جائیں گے جس کے بعد خاتون سپاہی اپنے قدرتی کان سے سن سکیں گی۔ اس سے قبل شنگھائی میں بھی ایسا ہی کامیاب تجربہ کیا جاچکا ہے۔