پاک چین تجارت کے لیے دستیاب کرنسیوں کی مالیت دگنی

36

 پاکستان اور چین نے مقامی کرنسیوں میں تجارت اور سرمایہ کاری کے لیے دستیاب کرنسیوں کی مالیت دگنی کر دی ہے۔

پاکستان اور چین نے مقامی کرنسیوں میں تجارت اور سرمایہ کاری کیلیے 1.5 ارب ڈالر کی کرنسیوں کا تبادلہ کیا تھا تاہم بیجنگ میں طے پانے والے اس حالیہ معاہدے کے نتیجے میں یہ مالیت 3 ارب ڈالر تک بڑھا دی گئی ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق پاک چین مقامی کرنسیوں کے تبادلے کے معاہدے میں3 سال کی توسیع کردی گئی ہے، پاکستان اور چین کے مابین تجارت اور سرمایہ کاری کیلیے مقامی کرنسیوں کے تبادلے کی سہولت کیلیے کرنسی سواپ ایگری منٹ کی مدت میں مزید 3 سال کے اضافے پر اتفاق کر لیا ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق دونوں ملکوں کے مرکزی بینکوں نے کرنسی سواپ ایگری منٹ کے تحت زیر استعمال کرنسیوں کی مالیت میں بھی اضافہ کردیا ہے، کرنسی سواپ کیلیے چینی کرنسی کی مالیت 10 ارب یوآن سے بڑھاکر 20 ارب یوآن کردی گئی ہے۔ پاکستانی کرنسی کی مالیت 165 ارب روپے سے بڑھاکر 351 ارب روپے کردی گئی ہے۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا کہنا ہے کہ کرنسی سواپ کیلیے سرمائے میں اضافہ مقامی کرنسیوں میں باہمی تجارت، سرمایہ کاری اور معاشی تعاون کے فروغ کیلیے مرکزی بینکوں کے عزم کی ترجمانی کرتا ہے۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ اس اقدام سے پاکستان کیلیے اپنی درآمدات اور بیرونی تجارت کیلیے ڈالر پر انحصار کم کرنے میں مدد ملے گی جس سے زرمبادلہ کے ذخائر پر بڑھتا ہوا دباؤ بھی کم ہوگا اور جاری کھاتے کے ریکارڈ خسارے کو بھی کم کرنے میں مدد ملے گی۔