ملک میں بجلی کا شارٹ فال ساڑھے 6 ہزار میگاواٹ ہو گیا

10

لاہور: (فلک نیوز) لاہور اور اسلام آباد سمیت اکثر شہروں میں وقفے وقفےسے ٹرپنگ، کہیں ہر دو گھنٹے بعد بتی جانےسے شہریوں کو شدید پریشانی، اندرونِ سندھ میں 10 سے 12 گھنٹے اعلانیہ اور غیر اعلانیہ لوڈ‍شیڈنگ جاری ہے۔

بجلی کی پیداوار کے سابق حکومت کے دعوے دھرے رہ گئے، نگران حکومت کو آخری ایام گننے کی فکر پڑ گئی۔ بجلی کی آنکھ مچولی، گرمی اور شدید حبس میں شہری بے بس ہو کر رہ گئے۔

بجلی کا شارٹ فال 6 ہزار 510 میگاواٹ، طلب 24 ہزار 760 میگاواٹ جبکہ فراہمی 18 ہزار 250 میگاواٹ ہے۔ ملک بھر کے مختلف علاقوں میں 3 سے 16 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے۔

لاہور کے شہریوں کو ان دنوں بڑے شارٹ فال کا سامنا ہے، شہر میں بجلی کی طلب 5 ہزار میگاواٹ جبکہ رسد ساڑھے 4400 ہے۔ سسٹم اوور لوڈ ہونے سے 3 سے 6 گھنٹے تک غیر اعلانیہ بندش کی جا رہی ہے۔

اسلام آباد میں 220 کے وی گرڈ سٹیشن بہارہ کہو میں تکنیکی خرابی کی وجہ سے بنی گالہ، شادرہ، بری امام، سری چکوک، انگوری اور ملحقہ علاقوں کو سپلائی متاثر ہو گئی ہے۔

ادھر گوجرانوالہ میں شارٹ فال 200 میگاواٹ تک پہنچ گیا ہے۔ بجلی کی طویل بندش کے خلاف شہری سراپا احتجاج بن گئے ہے۔ اندرون سندھ کے شہری علاقے بھی لوڈشیڈنگ کی لپیٹ میں آ گئے ہیں۔ سکھر میں 10 سے 12 گھنٹے اعلانیہ و غیر اعلانیہ بجلی کی بندش جبکہ سندھ کے دیہی علاقوں میں لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 16 گھنٹوں سے بھی تجاوز کر گیا ہے۔