ایفل ٹاور کی کہانی

27

جب بنی نوع انسان کے علم میں یہ بات آئی کہ لوہے کے بڑے بڑے ڈھانچوں کو جوڑ کرکس طرح ایک عمارت کی شکل میںڈھالا جاتا ہے اس وقت یورپ میں لوہے کے بڑے بڑے ڈھانچوں کی حامل عمارات کی تعمیر کی ایک لہر دوڑ اٹھی۔ یہ 19ویں صدی کا دور تھا۔ ایک ایسے فولادی ٹاور کی تعمیر کا خیال جس کی اونچائی 304.8 میٹر (1000فٹ) ہو پہلے پہل کارنس مین رچرڈ ٹریوی تھک کے ذہن میں سمایا۔ وہ پہلا شخص تھا جس نے یہ مظاہرہ بھی کر کے دکھایا تھا کہ بھاپ کے انجن کوکس طرح ریل کی پٹریوں پر چلانا ممکن ہوسکتا تھاتاکہ اس سے باز برداری کاکام لیاجاسکے۔ اس ٹاور کے خیال کواس وقت تک تقویت حاصل نہ ہوسکی حتی کہ انجینئر الیگزینڈر گسٹادو ایفل منظر عام پرآیا۔ ایفل دنیا کا ایک مشہور و معروف ماہرتعمیرات تھا جو فولادی تعمیرات کے ضمن میں مشہورتھا۔ اس نے کئی ایک فولادی تعمیرات سرانجام دی تھیں۔ 1889ء میں جب پیرس میں ایک نمائش کا اہتمام کیا گیا اس وقت ایفل کو یہ مشورہ دیاگیا کہ وہ ایک ایسی تعمیر سرانجام دے جو فولادی تعمیر کاایک عظیم الشان نظارہ پیش کرتی ہو۔ لہٰذا اس نے ایک ٹاور تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا۔1886ء میں اس ٹاور کی تعمیر کی تیاریوں کا آغاز کردیا گیا تھا۔ پتھروں پرمبنی اس کی بنیادیں رکھ دی گئی تھیں۔ 40ڈرافٹسمین اس ٹاور کے مختلف حصوں کی تفصیلی ڈرائینگیں تیار کرنے میں مصروف تھے اور ایک فیکٹری ان فولادی حصوں کی تیاری کے لیے روبہ عمل ہوچکی تھی۔ جوں ہی مئی 1889ء میںنمائش کے افتتاح کا وقت قریب آیا تو ٹاور کی تعمیر کا کام زیادہ جوش، جذبے اور ولولے کے ساتھ سرانجام دیا جانے لگا اگرچہ سردی اپنے جوبن پر تھی لیکن اس کے باوجود بھی سینکڑوں کاریگر لوہے کے گارڈروں کوآپس میں جوڑنے میں مصروف تھے اور اس کام کو مکمل کرنے کے لیے ڈیوٹی کے اوقات کار سے زائد اوقات تک کام سرانجام دے رہے تھے۔ پہلے چار دیو قامت فولادی ٹانگیں نصب کی گئیں اور ان کا آپس میں رابطہ قائم کیا گیا۔ 57.9 میٹر(190فٹ) کی بلندی پرایک پلیٹ فارم تعمیر کیا گیا۔ اس پلیٹ فارم پر ٹاورکا دوسرا حصہ تعمیر کیا جانا تھا۔ یہاں سے دوسرے پلیٹ فارم کی تعمیر تک کا تعمیراتی کام سرانجام دیاگیا۔ دوسرا پلیٹ فارم115.8میٹر (380فٹ) کی بلندی پر تعمیر کیا گیا اور تیسرا پلیٹ فارم272.2میٹر (895فٹ) کی بلندی پر تعمیر کیا گیا۔ اس کے اوپر ٹاور کا گنبد تھا۔ اس مینار میں لفٹیں بھی نصب کی گئیں اورمارچ 1889ء میں ایفل نے اس ٹاور پرفرانس کاجھنڈا لہرایا۔