حکومت ادھار کی رقم پر خوش ،اگر عمران خان احتساب چاہتے ہیں تو اپنے وزراء کا بھی احتساب کریں اور سب کو پکڑیں،بڑا مطالبہ کردیا گیا

19

سکھر: پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر کینسل کیے گئے تو پارلیمنٹ نہیں چلے گی،اگر حکومت احتساب چاہتی ہے تو اپنے وزراء کا بھی احتساب کرے اور سب کو پکڑیں،اللہ کرے حکومت اپنی مدت پوری کرے،حکومت ادھار کی رقم پر خوش ہورہی ہے۔ادھار پر کوئی گھر یا فیکٹری نہیں چلتی۔ اتوار کویہاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ ہم سب کی ذمہ داری ہے کہ ایسے فیصلے کریں جس سے بہتری آئے، اگر حکومت احتساب چاہتی ہے تو اپنے وزراءکا بھی احتساب کرے اور سب کو پکڑیں۔سید خورشید شاہ نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر کے بغیر پارلیمنٹ نہیں چل سکتی، جس پر صحافی نے سوال کیا شہباز شریف کے پروڈکشن آرڈر کینسل ہوئے تو اپوزیشن کیا کرے گی؟ جس پر انہوں نے کہا کہ پھر وزراء پارلیمنٹ میں نہیں آسکیں گے، ہم بھی نہیں آئیں گے اور پارلیمنٹ نہیں چلے گی۔انہوں نے سوال کیا کہ اپوزیشن لیڈر کے بغیر پارلیمنٹ کیسے چل سکتی ہے، ان کے پروڈکشن آرڈر کینسل کیے جانے کا مطلب ہے یہ پارلیمنٹ چلانا نہیں چاہتے، اللہ کرے حکومت اپنی مدت پوری کرے۔پیپلز پارٹی کے رہنما نے کہا کہ حکومت ادھار کی رقم پر خوش ہورہی ہے، ادھار پر کوئی گھر یا فیکٹری نہیں چلتی، پاکستان کو تو صرف ڈپازٹ کرنے کے لئے پیسے ملے ہیں اور اس پیسے کو ہم ہاتھ بھی نہیں لگا سکتے جبکہ اس پر 3 فیصد سود بھی دے رہے ہیں۔رہنما پیپلز پارٹی نے کہا کہ منی بجٹ میں انڈسٹری کو ریلیف دیا گیا، زراعت کے شعبے کونہیں،بجلی اور گیس کی قیمتوں میں بھی کوئی رعایت نہیں کی گئی۔ عمران خان نے کہا تھا کہ 50 لاکھ گھر گراؤں گا، بناؤں گا نہیں۔